حسن علی دنیا کے بہترین باؤلر کیوں؟

 

لاہور ( آزاد دنیا اسپورٹس ) دنیا میں تیز ترین گیند باز پیدا کرنے والی سر زمین پاکستان میں کبھی بھی ایسا نہیں ہوا کہ فاسٹ باؤلنگ کا ٹیلنٹ نہ ملا ہو۔ پاکستان نے کئی ایسے باؤلر پیدا کیے جنہوں نے کرکٹ کی تاریخ میں اپنا نام پیدا کیا۔ فضل محمود سے سرفراز نواز، عمران خان سے لیکر ٹو ڈبلیو( وسیم اور وقار) شعیب اختر سے محمد آصف اور اب محمد عامر سے حسن علی سب ہی باؤلر اپنے دور کے لیجنڈز میں شمار کیے جاتے ہیں
اگر حسن علی کی بات کی جائے تو انہوں نے انٹرنیشل کرکٹ میں قدم رکھنے کے بعد کبھی مُڑ کر نہیں دیکھا اور مخالف ٹیموں کی لائن اپ کو پریشان کرتے رہے۔ حسن علی نے اپنی پہلی 50 وکٹیں 24 میچوں میں حاصل کیں اس طرح وہ پاکستان کے تیز ترین 50 وکٹیں لینے والے باؤلر بن گئے، اس سے قبل یہ اعزاز وقار یونس کے پاس تھا۔
حسن علی کی کئی خصوصیات انہیں ایک ممتاز باؤلر بناتی ہیں، وہ مڈل اوور میں کم ترین اکاونومی ریٹ رکھنے والے باؤلر ہیں، جو مارڈرن کرکٹ کی ایک اہم ضرورت ہے
انہوں نے سال 2017ء میں سب سے زیادہ وکٹیں حاصل کیں اور وہ عالمی رینکنگ میں بھی پہلے نمبر پر براجمان ہیں۔ وہ آئی سی سی چیمپئز ٹرافی کے بھی ہیرو رہے اور مین آف دی ٹورنامنٹ حاصل کیا۔
اس سے قبل عظیم آسٹریلین کرکٹر اور سابق کپتان ای ین چیپل نے حسن علی کو پاکستانی بالنگ لائن کا اہم مہرہ قرار دیا۔ ای ین چیپل نے کہا چمپئنز ٹرافی میں سب سے زیادہ متاثر کن پاکستانی فاسٹ بالر حسن علی رہے اور ان جیسی بولنگ کسی بھی کھلاڑی نے نہیں کی۔ اس موقع پر ویسٹ انڈیز کے سابق عظیم بیٹسمین ویوین رچرڈز اور برائن لارا نے بھی ان کی رائے سے اتفاق کرتے ہوئے حسن کو ہی ایونٹ کی دریافت قرار دیا۔